تفسیر سورہ بقرہ آیت ۱۵۵۔۱۵۶۔۱۵۷ ۔ امتی کے لئے سب سے بڑی مصیبت حضورتاجدارختم نبوت ﷺسے دوری ہے

امتی کے لئے سب سے بڑی مصیبت حضورتاجدارختم نبوت ﷺسے دوری ہے {وَلَنَبْلُوَنَّکُمْ بِشَیْء ٍ مِّنَ الْخَوْفِ وَالْجُوْعِ وَنَقْصٍ مِّنَ الْاَمْوٰلِ وَالْاَنْفُسِ وَالثَّمَرٰتِ وَبَشِّرِ الصّٰبِرِیْنَ}(۱۵۵){الَّذِیْنَ اِذَآ اَصٰبَتْہُمْ مُّصِیْبَۃٌ قَالُوْٓا اِنَّا لِلہِ وَ اِنَّآ اِلَیْہِ رٰجِعُوْنَ}(۱۵۶){اُولٰٓئِکَ عَلَیْہِمْ صَلَوٰتٌ مِّنْ رَّبِّہِمْ وَرَحْمَۃٌ وَاُولٰٓئِکَ ہُمُ الْمُہْتَدُوْنَ}(۱۵۷) ترجمہ کنزالایمان:اور ضرور ہم تمہیں آزمائیں گے کچھ ڈر اور بھوک سے اور کچھ مالوں اور جانوں …

مزید پڑھہں