شب برات میں آتش بازی کا شرعی حکم

شَبِّ بَرَاءَت (یعنی شعبان المعظم کی پندرہویں رات) میں جو مُرَوَّجَہ آتَش بازِی چھوڑی جاتی ہے، اس کا شرعی حکم کیا ہے؟ الجواب بعون الملک الوہاب: شَبِّ بَرَاءَت میں جو مُرَوَّجَہ آتَشبازِی چھوڑی جاتی ہے چونکہ اس کا مقصد کھیل کود اور تفریح ہوتا ہے لہذا یہ فضول خرچی، ناجائز و گناہ اور جہَنَّم میں لے جانے والا کام ہے …

مزید پڑھہں