کیا غیبت زنا سے بدتر ہے؟ از مفتی نظام الدین رضوی

کیا غیبت زنا سے بدتر ہے؟

سوال : کیا غیبت زنا سے بدتر ہے؟ جبکہ زنا کے بارے میں یہ نہیں کہا گیا کہ جب تک متاثرہ معاف نہ کرے معاف نہ ہوگا؟

الجوابــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ

زنا میں دونوں فریق راضی ہوتے ہیں تو کسی کا حق دوسرے پر نہیں عائد ہوتا، نہ عورت کا مرد پر نا مرد کا عورت پر، یہ خالص اللہ کا حق بن جاتا ہے۔

اب اگر یہ توبہ کرلیں تو اللہ تعالی معاف فرما دے گا ۔ لیکن غیبت میں آدمی جو گناہ کر رہا ہے یا جس کی غیبت کر رہا ہے وہ اس پر راضی نہیں ہے اور

اس غیبت کی وجہ سے اس کو تکلیف پہنچ رہی ہے ، تو غیبت کرنے والے نے اس بندے کا حق تلف کیا ہے اور بندہ جب تک معاف نہیں کرے گا اللہ

تعالی بھی معاف نہیں کرے گا اس لیے یہ زنا سے بڑھ کر ہوا ۔

واللہ تعالی اعلم

کتبــــــــــــــــــہ : مفتی نظام الدین رضوی جامعہ اشرفیہ مبارکپور

Leave a Reply

%d bloggers like this: